عوام میں پولیو کے خاتمہ کا شعور اجاگر کرنے کیلئے بھرپور مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے

1994ء میں پولیو کیسز کی تعداد 22 ہزار تھی جو کم ہو کر 53 پر آگئی ہے، بابر بن عطا

عوام میں پولیو کے خاتمہ کا شعور اجاگر کرنے کیلئے بھرپور مہم شروع کرنے ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 23 اگست2019ء) پولیو کے خاتمہ کے لئے ملک بھر میں مہم جاری ہے۔ وزیراعظم عمران خان کی خصوصی ہدایات پر وفاقی دارالحکومت سمیت صوبوں سے پولیو کے مکمل خاتمہ کے لئے اقدامات کئے جارہے ہیں۔معاون خصوصی برائے انسداد پولیو بابر عطا نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ملک بھر میں 53 پولیو کے کیسز سامنے آئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ رواں سال بیشتر پولیو کیسز کا تعلق بنوں سے ہے۔ پولیو سے متاثرہ بچوں کو انسداد پولیو قطرے نہیں پائے گئے۔ انہوں نے کہا کہ پولیو ویکسین واحد حل ہے پولیو کی جدید ترین لیبارٹری اسلام آباد میں موجود ہے اور انہی قطروں سے تمام مسلمان ممالک میں پولیو ختم گیا گیا۔ پولیو ویکسین مسلمان ملک انڈونیشیا سے منگوائی جاتی ہے انہوں نے کہاکہ آج تک پولیو ویکسین سے کسی بچے کو نقصان نہیں پہنچا ۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ ہر پولیو مہم کے دوران 5 سال سے کم عمر بچوں کو پولیو کے قطرے پلانے چاہئے۔ انہوں نے بتایا کہ پولیو کے خاتمہ کے لئے ذرائع ابلاغ سمیت دیگر ذرائع سے عوام میں شعور اجاگر کرنے کیلئے بھرپور مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 1994ء میں جب پولیو پروگرام شروع ہوا اس وقت پولیو کیسز کی تعداد 22 ہزار تھی جو کم ہو کر 53 پے آگئی ہے۔

انہوں نے والدین سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنے بچوں کو پولیو سے بچائو کے قطرے پلا کر عمر بھر کی معذوری سے بچا سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مائیکرو سافٹ کے بانی بل گیٹس نے وزیراعظم عمران خان کو خط لکھا اور خیبرپختونخوا میں بڑھتے ہوئے پولیو کیسز پر اجلاس طلب کرنے پر وزیراعظم کا شکریہ ادا کیا اور پولیو کے خاتمہ میں کی جانے والی کوششوں پر حکومت پاکستان کو خراج تحسین پیش کیا۔

Your Thoughts and Comments