بحرین ؛ نئے قرنطینہ پروٹوکول جاری‘ بچوں کیلئے بوسٹر ڈوز کی بھی منظوری دیدی گئی

ملک میں داخل ہونے والے مسافروں کے لیے احتیاطی قرنطینہ پروٹوکول کو اپ ڈیٹ کردیا گیا ‘ نیشنل میڈیکل ٹاسک فورس نے 12 سے 17 سال کی عمر کے نوعمروں کے لیے بوسٹر شاٹس کی منظوری دے دی

Sajid Ali ساجد علی جمعہ 14 جنوری 2022 17:11

بحرین ؛ نئے قرنطینہ پروٹوکول جاری‘ بچوں کیلئے بوسٹر ڈوز کی بھی منظوری دیدی گئی
منامہ ( اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار ۔ 14 جنوری 2022ء ) خلیجی ملک بحرین نے نئے قرنطینہ پروٹوکول جاری کرتے ہوئے بچوں کیلئے بوسٹر ڈوز کی بھی منظوری دے دی۔ عرب میڈیا کے مطابق بحرین میں احتیاطی قرنطینہ کی مدت ان افراد کے لیے انفیکشن کی تاریخ سے سات دن کردی گئی ہے جو BeAware بحرین کی درخواست پر گرین شیلڈ رکھتے ہیں ، اس کا اعلان حکومت کی ایگزیکٹو کمیٹی کی منظوری کے بعد کوویڈ 19 سے نمٹنے کے لیے قومی ٹاسک فورس نے کیا۔

اس میں کہا گیا ہے کہ گرین شیلڈ رکھنے والے سات دن کے بعد پی سی آر ٹیسٹ لیے بغیر قرنطینہ سے باہر نکل سکتے ہیں ، تاہم جن افراد کو ویکسین نہیں لگائی گئی یا بی اویئر بحرین ایپ پر پیلی یا سرخ شیلڈ رکھتے ہیں، انہیں انفیکشن کی تاریخ سے 10 دن کے لیے قرنطینہ میں رہنا چاہیے اور 10 دن کے بعد پی سی آر ٹیسٹ لیے بغیر قرنطینہ سے باہر نکل سکتے ہیں۔

(جاری ہے)

ٹاسک فورس نے تمام بندرگاہوں کے ذریعے بحرین میں داخل ہونے والے مسافروں کے لیے احتیاطی قرنطینہ پروٹوکول کو اپ ڈیٹ کرنے کا بھی اعلان کیا ، BeAware ایپ پر پیلے یا سرخ رنگ کی شیلڈ رکھنے والے افراد اور غیر ویکسین شدہ مسافروں کو سات دن کے لیے قرنطینہ میں رہنا ہوگا ، گرین شیلڈ رکھنے والے مسافروں کو قرنطینہ کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔

اسی طرح نیشنل میڈیکل ٹاسک فورس برائے کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے 12 سے 17 سال کی عمر کے نوعمروں کے لیے بوسٹر شاٹس کی منظوری دے دی ہے ، جن نوعمروں کو سائنوفرم ویکسین کی دو خوراکیں ملی ہیں انہیں دوسری خوراک کے چھ ماہ بعد سائنو فارم یا فائزر بوسٹر شاٹس دیے جائیں گے تاہم جن نوعمروں کو فائزر ویکسین کی دونوں خوراکیں مل چکی ہیں، انہیں دوسری خوراک کے چھ ماہ بعد ہی فائزر بوسٹر شاٹ لگایا جائے گا۔

ٹاسک فورس نے یہ بھی نوٹ کیا کہ اس عمر کے گروپ کے لیے 'BeAware' ایپلی کیشن پر سبز شیلڈ پیلے رنگ میں تبدیل نہیں ہوگی اگر انہیں بوسٹر شاٹ نہیں ملتا ، ویکسی نیشن پروٹوکول کو اپ ڈیٹ کرنا مملکت کی طرف سے وبائی صورتحال سے نمٹنے اور صحت عامہ کو برقرار رکھنے کے لیے اٹھائے گئے اقدامات کے مطابق ہے ، یہ اقدامات ایک ایسے وقت میں آئے ہیں جب مملکت روزانہ کورونا انفیکشن میں ایک اور اضافے کا سامنا کر رہی ہے۔

متعلقہ عنوان :

منامہ میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments