Phansi By Saadat Hasan Manto

پھانسی - سعادت حسن منٹو

Phansi in Urdu
جس چیز نے ہیوگو کے دماغ کو حد سے زیادہ پریشان کیا جس مسئلہ نے ہیوگو پر راتوں کی نیند حرام کردی، جس قانون نے اس کے قلم کو اعجاز بخشا، وہ سزائے موت کا خونی فتویٰ تھا۔ مصنف کے ذہن میں سزائے موت کے ہولناک نتائج نے جگہ پکڑی۔ جب وہ اپنے مکان پر بیٹھا تماشائیوں کو مقتل کی طرف اندھا دھند بھاگتے دیکھتا، تب اس کا خیال مقتول کی طرف ہوتا۔ وہ اس کی مشکلات کا خاکہ کھینچتا۔ وہ خود کو مقتول تصور کرتا، تاکہ اس پر تدریجی مصائب واضح ہوجائیں۔ یہ المناک منظر صبح سے لے کر چار بجے شام تک جاری رہتا۔ جب پھانسی کا گھنٹہ بج چکتا، تب اس کے ذہن کو تھوڑا سا سکون حاصل ہوتا۔ اس کے علاوہ دیکھا جائے تو سعادت حسن منٹو نے بہت ہی خوبصورتی کے ساتھ ناول کا ترجمہ کیا ہے۔

Chapters / Baab of Phansi

قسط نمبر 1

قسط نمبر 2

قسط نمبر 3

قسط نمبر 4

قسط نمبر 5

قسط نمبر 6

قسط نمبر 7

قسط نمبر 8

قسط نمبر 9

قسط نمبر 10

قسط نمبر 11

قسط نمبر 12

قسط نمبر 13

قسط نمبر 14

قسط نمبر 15

قسط نمبر 16

قسط نمبر 17

قسط نمبر 18

قسط نمبر 20

قسط نمبر 21

قسط نمبر 22

قسط نمبر 23

قسط نمبر 24

قسط نمبر 25

قسط نمبر 26

قسط نمبر 27

قسط نمبر 28

قسط نمبر 29

قسط نمبر 30

قسط نمبر 31

قسط نمبر 32

قسط نمبر 33

قسط نمبر 34

قسط نمبر 35

قسط نمبر 36

قسط نمبر 37

قسط نمبر 38

قسط نمبر 39

قسط نمبر 40

قسط نمبر 41

قسط نمبر 42

قسط نمبر 43

قسط نمبر 44

قسط نمبر 45

قسط نمبر 46

قسط نمبر 47

قسط نمبر 48

قسط نمبر 49

آخری قسط