اُردو پوائنٹ پاکستان اسلام آباداسلام آباد کی خبریںاپوزیشن احتجاج کرے،دھرنا دے،بلیک میل نہیں ہوںگا،عمران خان ہم آپ کوکنٹینر ..

اپوزیشن احتجاج کرے،دھرنا دے،بلیک میل نہیں ہوںگا،عمران خان

ہم آپ کوکنٹینر دیں گے، کھانے اور لوگ بھی پہنچائیں گے،ڈی چوک میں ایک مہینہ دھرنا دیں چیلنج کرتا ہوں،جومرضی کرلیں این آراو نہیں ملے گا۔نومنتخب وزیراعظم عمران خان کا ایوان میں خطاب

اسلام آباد(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔17 اگست 2018ء):پاکستان کے 22 ویں نومنتخب وزیراعظم عمران خان نیازی نے کہا ہے کہ اپوزیشن دھاندلی کیخلاف احتجاج کرے،دھرنا دے، بلیک میل نہیں ہوں گا،ہم آپ کوکنٹینر دیں گے، کھانے اور لوگ بھی پہنچائیں گے،ایک مہینہ دھرنا دیں چیلنج کرتا ہوں،جومرضی کرلیں این آر او نہیں ملے گا۔انہوں نے آج قومی اسمبلی میں 176ووٹوں کے ساتھ قائد ایوان منتخب ہونے کے بعد اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ پوری قوم کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔

وہ تبدیلی آگئی ہے جس کا پوری قوم انتظار کررہی تھی۔اس ملک میں سب سے پہلے ہم نے کڑا احتساب کرنا ہے۔جن لوگوں نے اس ملک کولوٹا اور مقروض کیا ،وعدہ کرتا ہوں ان کو نہیں چھوڑوں گا۔کسی قسم کا کسی ڈاکو کواین آر او نہیں ملے گا۔

(خبر جاری ہے)

میں نے 22سال جدوجہد کی، مجھے کسی ڈکٹیٹر نے نہیں پالا تھا۔میں اپنے پیروں پریہاں پہنچا ہوں۔میرا باپ سیاست میں نہیں تھا۔

نہ میرا کوئی تجربہ تھا۔مجھے انہوں نے کہا کہ جوکرپٹ لوگ ملک کاپیسا لوٹ کرباہر لے کرگئے واہ واپس لے کرآئیں گے۔پارلیمنٹ کو طاقتور بناؤں گا۔ہر ہفتے پارلیمنٹ میں آؤں گا۔پچھلے 10سالوں میں 6ہزار سے آج 28ہزار قرض چڑھایا گیا ،ایوان میں اس پربحث کریں گے کہ انہوں نے ملک کوکیسے بدحال کردیا؟جو پیسا لوگوں کوتعلیم وصحت میں جانا تھا ،وہ لوگوں کی جیبوں میں چلا گیا۔

انشاء اللہ اس پارلیمنٹ میں آکر بحث کریں گے اور یہ پیسا واپس لائیں گے۔عمران خان نے نوجوانوں کو پیغام دیا کہ وہ نوجوان جن کی وجہ سے آج میں یہاں کھڑا ہوں ، نہ وہ ہماری حمایت کرتے اور نہ ہم یہاں ہوتے۔میں اپنے نوجوانوں کے مستقبل بہتر بنانے کی کوشش کروں گا۔عمراں خان نے کہا کہ پارلیمنٹ میں شور مچانے والوں سے پوچھتا ہوں کہ 2013ء کے الیکشن میں چار حلقوں کی بات کی لیکن انہوں نے چار حلقے نہیں کھولے۔

ہمیں اڑھائی سال عدالتوں میں جانا پڑا۔چاروں حلقوں میں غیرقانونی ووٹ نکلے۔انہوں نے کیوں احتساب نہیں کیا۔عمران خان نے کہا کہ 43حلقوں میں ہم 3ہزار ووٹوں سے ہارے ہیں ، کس نے مدد کی ؟ جوہمیں ووٹ نہ ڈلوا سکے۔انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن اور سپریم کورٹ میں دھاندلی کے ایشو پرحمایت کریں گے۔کیونکہ ہم نے دھاندلی نہیں کی ہے۔میں بتا دینا چاہتا ہوں کہ مجھے کوئی بلیک میل نہیں کرسکتا۔سڑکوں پرنکلو، اگر دھرنا دینا ہے توہم آپ کوکنٹینر دیں گے۔ہم کھانے بھی پہنچائیں گے اور لوگ بھی بھیجیں گے۔ڈی چوک آپ کے سامنے ہے۔لیکن جو مرضی کرلیں آپ کواین آر او نہیں ملے گا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں -

اسلام آباد شہر کی مزید خبریں