پاکستان میں 10 سال بعد ٹیسٹ کرکٹ کی واپسی کی کوششیں رائیگاں

سری لنکا نے ٹیسٹ سیریز کھیلنے کیلئے رواں برس دورہ پاکستان کی خبروں کی تردید کردی

muhammad ali محمد علی اتوار اپریل 00:37

پاکستان میں 10 سال بعد ٹیسٹ کرکٹ کی واپسی کی کوششیں رائیگاں
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 اپریل2019ء) پاکستان میں 10 سال بعد ٹیسٹ کرکٹ کی واپسی کی کوششیں رائیگاں، سری لنکا نے ٹیسٹ سیریز کھیلنے کیلئے رواں برس دورہ پاکستان کی خبروں کی تردید کردی۔ تفصیلات کے مطابق 2 روز قبل خبر سامنے آئی تھی کہ پاکستان میں رواں سال ٹیسٹ کرکٹ کی واپسی کی امید پیدا ہو گئی ہے اور پاکستان کرکٹ بورڈ نے رواں سال ٹیسٹ چیمپیئن شپ کے سلسلے میں ٹیسٹ سیریز اپنی سرزمین پر کھیلنے کے لیے سری لنکا سے بات چیت شروع کردی ہے۔

ورلڈ کپ کے بعد جولائی سے آئی سی سی ٹیسٹ چیمپیئن شپ کا آغاز ہو گا اور اسی سلسلے میں پاکستان نے سیریز کی اپنی سرزمین پر میزبانی کے لیے دو ٹیسٹ میچوں کی سیریز کے حوالے سے سری لنکن کرکٹ بورڈ سے مذاکرات شروع کر دیے ہیں۔

(جاری ہے)

تاہم اب اس حوالے سے سری لنکن کرکٹ بورڈ کی جانب سے وضاحتی بیان جاری کیا گیا ہے۔ سری لنکن کرکٹ بورڈ نے ٹیسٹ سیریز کھیلنے کیلئے دورہ پاکستان سے متعلق کسی بھی قسم کی بات چیت ہونے کی خبروں کی تردید کی ہے۔

سری لنکن کرکٹ بورڈ نے واضح کیا ہے کہ سری لنکن کرکٹ ٹیم کو ٹیسٹ سیریز کیلئے پاکستان بھیجنے سے متعلق کسی قسم کا کوئی فیصلہ بھی نہیں کیا گیا۔ یاد رہے کہ 2009 میں سری لنکن ٹیم پر لاہور میں ہوئے دہشت گرد حملے کے بعد سے پاکستان نے کسی بھی ٹیسٹ میچ کی میزبانی اپنی سرزمین پر نہیں کی۔اس کے بعد سے پاکستان کو اپنی تمام ہوم سیریز متحدہ عرب امارات کے نیوٹرل مقام پر کھیلنی پڑیں البتہ وہاں سیریز کا انعقاد پر پی سی بی کی خطیر رقم خرچ ہوتی ہے اور اسی وجہ سے بورڈ ایک عرصے سے غیرملکی ٹیموں کو پاکستان آ کر کھیلنے کے لیے آمادہ کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔

2015 میں زمبابوے کی ون ڈے سیریز میں میزبانی کرنے کے بعد ٹیسٹ کھیلنے والے تین ملکوں پر مشتمل ورلڈ الیون نے 2017 میں پاکستان کا دورہ کر کے تین ٹی20 انٹرنیشنل میچوں کی سیریز کھیلی تھی۔پھر سری لنکا کی ٹیم ایک ون ڈے میچ کھیلنے پاکستان آئی تھی جس کے بعد ویسٹ انڈیز نے تین ٹی20 میچوں کی سیریز کے لیے پاکستان کا دورہ کیا تھا اور اس کے بعد پی سی بی ملک میں عالمی کرکٹ کی مکمل بحالی کے حوالے سے آگے بڑھ رہا ہے۔

اس دوران ملک میں پاکستان سپر لیگ کے میچز کا انعقاد بھی ہوتا رہا جس میں دنیا بھر کے سپر اسٹارز نے شرکت کی خصوصاً پاکستان سپر لیگ کے چوتھے ایڈیشن کے 8 میچز پاکستان میں منعقد ہوئے جس میں تمام ہی ٹیموں کے غیرملکی کھلاڑیوں نے کراچی آ کر میچز کھیلے۔ان تمام عالمی اور پی ایس ایل میچز کا کامیابی سے انعقاد کیا گیا جسے غیرملکی کھلاڑی بھی سراہے بنا نہ رہ سکے اور پی سی بی کی ان کوششوں سے ملک میں عالمی کرکٹ کی واپسی کی امید روشن ہوئی۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 14/04/2019 - 00:37:08

Your Thoughts and Comments