ناجائز تجاوازات کیخلاف آپریشن میںقبضہ گروپوں اور ٹیکس گزاروں میں تفریق رکھی جائے ‘پیاف

حقائق کو مدنظررکھے بغیر آپریشن سے تاجربراردی کا غم و غصہ بڑھ رہا ہے،تجاوزات آپریشن زمینی حقائق کے مطابق کیا جائے

ناجائز تجاوازات کیخلاف آپریشن میںقبضہ گروپوں اور ٹیکس گزاروں میں ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 دسمبر2018ء)پاکستان اندسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشن فرنٹ (پیاف) نے کہا ہے کہ حکومت کا اہم تجارتی مراکز میں ناجائزتجاوزت کے خلاف آپریشن خوش آئند ہے مگر شہر کی عرصہ دراز سے قائم مارکیٹوں میں تجاوزات کے خلاف حقائق کو مدنظررکھے بغیر آپریشن سے تاجربراردی کا غم و غصہ بڑھ رہا ہے ، ٹیکس گزار تاجروں اور دکانداروں کے حقوق غضب نہ کئے جائیں دکاندار اپنی جگہ کے ملکیت اور کاغذات ہونے کے باوجود دکانیں گرانے پر تاجر پریشان ہیں،مارکیٹوںمیں روزانہ کی بنیاد پر کروڑوں کا ریونیو جنریٹ ہوتا ہے اور ٹیکس کی مد میں لاکھوں روپیہ حکومت کے اکائونٹ میں جاتا ہے لہٰذا ٹیکس گزار مالکانہ حقوق رکھنے والے دانداروں کی دکانیں نہ گرائی جائیں۔

چیئر مین پیاف میاں نعمان کبیر،سینئر وائس چیئرمین ناصر حمید خان اور وائس چیئر مین جاویداقبال صدیقی نے مختلف مارکیٹوں سے آنے والے تاجروں کے وفود سے ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تاجر برادری ناجائز تجاوازت کے خلاف ہیں انکے خلاف آپریشن ہونا چاہئے تاکہ مارکٹیوں میں آمدورفت، سامان کی ترسیل اور پارکنگ کے لئے جگہ مختص ہو سکے مگر تجاوزات کے خلاف آپریشن میں قبضہ گروپوںکے ساتھ حقیقی اورجائز جگہ رکھنے والے اور ملکیت کا ثبوت رکھنے والے ٹیکس دہندگان کو بھی تنگ کیا جارہاہے۔

(جاری ہے)

جوسراسر ناانصافی ہے متعلقہ سرکاری محکموں کا سٹاف من مرضی کرتے ہوئے جس طرح تجاوزت کے خلاف آپریشن کر رہا ہے اس سے کئی مارکیٹس میںبحرانی کیفیت پیداہو گئی ہے۔ اس پراپرٹی کو بھی منہدم کیا جا رہا ہے جو حکومت کو ٹیکس دے رہی ہے۔ تجاوزات کے خلاف آپریشن سے قبل تاجروں کو اعتماد میں لینا ضروری ہے۔ موجودہ صورتحال کی وجہ سے نہ صرف تاجروں کو مالی نقصان ہورہا ہے بلکہ حکومت بھی ریونیو سے محروم ہو رہی ہے۔

پیاف عہدیدران سے حکام بالا سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ تاجر برادری ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں اور وہ پہلے ہی نا مساعد حالات میں ملکی ترقی میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں لہٰذا زمینی حقائق کو مد نظر رکھتے ہوئے تجاوزات کے خلاف آپریشن کرتے ہوئے قبضہ گروپوں اور ٹیکس گزاروں کے درمیان فرق رکھا جائے ۔

Your Thoughts and Comments