ایف پی سی سی آئی کے صدر انجینئر دارو خان اچکزئی نے وزیر اعظم عمران خان کے دورہ ایران کو سراہا

ایف پی سی سی آئی کے صدر انجینئر دارو خان اچکزئی نے وزیر اعظم عمران ..
کرا چی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 23 اپریل2019ء) فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹر ی کے صدر انجینئردارو خان اچکز ئی نے وزیر اعظم پاکستان کے دورہ ایران کو سراہتے ہو ئے کہاکہ یہ دو رہ دو نوں ممالک کے ما بین با ہمی تجا رت اور معا شی تعلقا ت کو مزید فر وغ دے گا ۔ انہوں نے کہاکہ فی الوقت پاکستان اور ایران Preferential Trade Agreement (PTA) کے تحت تجا رت کر رہے ہیں جس میں 18فیصد مصنو عات پر رعا یت دی گئی ہے ۔

لیکن ایران پر بیرو نی پا بند یو ں کے با عث اسPTAسے مکمل فا ئدہ نہیں اُٹھایا جا رہا ۔ اس کی وجہ سے پاکستا ن ایران میں اپنی پروڈکٹ ما رکیٹ کھو تا جا رہا ہے جس میں آم، چا ول ، سٹر س فروٹ اور دیگر زر عی اجنا س شا مل ہیں ۔ صدر ایف پی سی سی آئی انجینئر دا رو خان اچکزئی نے دو نو ں ملکو ں کے ما بین بارٹر تجا رت سسٹم کے فرو غ پر زور دیا ہے جس کے تحت پاکستا ن کے زرعی اجنا س ، پھل اور سبز یاں ایران کوبر آمد کر سکتا ہے اور بدلے میںایران سے خام تیل اور پٹرولیم مصنوعات کی درا ٓمد کر سکتا ہے ۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہاکہ پاک ایران تجا رت کا حجم 398.5 ملین ڈالر ہے جس میں پاکستان کی بر آمدات کا حجم 21.0 ملین ڈالر اور درآمدات کا حجم 377.4 ملین ڈالر ہے ۔ انجینئردارو خان اچکزئی نے مزید کہاکہ بین الاقوامی اداروں مثلاًOIC, D-8, ECO اور G-24 اور G-77 کا ایران اہم رکن ہے اور پاکستان بھی ان ادارو ں کا فعال ممبر ہے ۔ انہو ںنے کہاکہ مضبو ط تجا رتی اور کا روباری تعلقا ت نہ صر ف دو نو ں ممالک کے معا شی صورتحال کی بہتر ی میں معا ون ثا بت ہو گا بلکہ خطے کی معاشی خو شحالی میں بھی نما یا ں کردارادا کر یں گے ۔

اس کے ساتھ انہو ں نے مزید کہاکہ کے دو نو ں ممالک کو زمینی راستے کے ذریعے بڑھانی چا ہیے اور Gabd-Reemdan اور Mand-Pashin با رڈر کو تجا رت کے لیے کھولنا چا ہیے ۔ ان راستو ں کے ذریعے کی جا نے والی تجا رت بلو چستان کی معا شی تر قی میں اہم کر دار ادا کر ے گی ۔ بین الاقوامی طو ر پر یہ با ت ثابت ہو چکی ہے کہ نئی تجا رتی زمینی راہداریو ں کے قیام سے تجا رت کو فر وغ حاصل ہو تا ہے اور اس کی بہترین مثال بھا رت ہے جس نے بنگلادیش اور نیپا ل سے تجا رت کی غر ض سے زمینی تجا رتی راہ داریاں قا ئم کی ۔

انجینئردارو خان اچکزئی نے مزید کہاکہ ایران دنیا کا پہلا ملک تھاجس نے پاکستان کو 1947میں ایک آزاد ملک کے طور پر تسلیم کیا پاکستان کے ایران کے ساتھ اس وقت سے اچھے اور منفر د تعلقا ت ہیں ۔پاک ایران گیس پا ئپ لا ئن منصوبے پر بات چیت کر تے ہو ئے انہوں نے زور دیاکہ اس منصوبہ کو جلداز جلدمکمل ہو نا چا یئے ۔دارو خان اچکزئی نے ایران کی جانب سے بلو چستا ن کو بجلی کی بر آمدت شروع کر نے پر زور دیا کیونکہ ایران کے اس اقدام سے بلو چستان میں بجلی کے بحران کو قابو پا نے میں مدد ملے گی۔

انجینئردارو خان اچکزئی نے چابہار پو رٹ کی تعمیر و تر قی کو سر اہا اور کہاکہ اس ے گوادر پورٹ کے ساتھ مل کر شمال سے جنوب اور مشر ق سے مغر ب تک تجا رت کو فر وغ دینا چا ہیے ۔ انجینئردارو خان اچکزئی نے دو نو ں ملکو ں کے در میان معا شیfinancial channelsقا ئم کر نے کی تجو یز دیتے ہے کہاکہ اس سے دو نو ں ملکو ں کے در میان کا روباری لا گت کم ہو گی ۔انہوں نے تجا رت کے فرو غ کے لیے دو نو ں ملکو ں کے ما بین تجا رتی سر گر میاں بر ھانے پر بھی زور دیا ۔ انجینئردارو خان اچکزئی نے حکومت ایران کے پاکستانی قیدیو ں کی رہا ئی کے عمل اور ان کے پاکستان واپسی کے انتظامات کو بھی سر اہا ۔

Your Thoughts and Comments