پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں تیزی ،مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت 84ارب36کروڑ25لاکھ روپے بڑھ گئی

پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں تیزی ،مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت 84ارب36کروڑ25لاکھ ..
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 26 اکتوبر2020ء) پاکستان اسٹاک مارکیٹ میںکاروباری ہفتے کے پہلے روز پیر کو تیزی کا رجحان غالب رہا جس کے نتیجے میںکے ایس ای100انڈیکس 584.47پوائنٹس کے اضافے سی41850.47پوائنٹس کی سطح پرپہنچ گیاجب کہ 71.39فی صد کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میںاضافہ ریکارڈکیا گیا جس کے سبب مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت 84ارب36کروڑ25لاکھ روپے بڑھ گئی تاہم حصص کی لین دین کے لحاظ سے کاروباری حجم گزشتہ ٹریڈنگ سیشن کی نسبت 37.44فیصدزائد رہا۔

پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں پیر کو ٹریڈنگ کے آغاز سے ہی سرمایہ کاروں کی جانب سے حصص خریداری میں بھرپور دلچسپی نظر آئی اور ایف اے ٹی ایف کی جانب سے پاکستان پر بلیک لسٹ ہونے کے خطرات ٹل جانے کے باعث تیزی رہی اور ٹریڈنگ کے دوران کے ایس ای100انڈیکس41300،41400،41500،41600،41700،41800پوائنٹس کی نفسیاتی حد یں یکے بعد دیگرے بحال ہوگئیں تیزی کا رجحان آخر تک برقرار رہا اورکاروبار کے اختتام پر کے ایس ای100انڈیکس 584.47پوائنٹس کے اضافے سی41850.47پوائنٹس کی سطح پر بند ہوا جب کہ کے ایس ای30انڈیکس213.35ائنٹس کے اضافے سی17594.63پوائنٹس اور کے ایس ای آل شیئر انڈیکس 321.25پوائنٹس کے اضافے سی321.25پوائنٹس پربند ہوا۔

(جاری ہے)

گزشتہ روز مجموعی طور پر430کمپنیوں کا کاروبار ہوا جس میں سی307کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ 105میں کمی اور18کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں استحکام رہا۔تیزی کے سبب مارکیٹ کے سرمائے کا مجموعی حجم76کھرب46ارب 57کروڑ6لاکھ روپی سے بڑھ کر77کھرب30ارب93کروڑ31لاکھ روپے ہوگیا۔قیمتوں میں اتار چڑھاوکے اعتبار سے رفحان میظ کے حصص کی قیمت200روپے کے اضافے سے 8300روپے اورملت ٹریکٹرز57.80روپے کے اضافے سے 979.13روپے ہوگئی جب کہ نیسلے پاکستان کے حصص کی قیمت74.69روپے کی کمی سی6425.31روپے اورپریمیئر شوگر42.69روپے کی کمی سی526.56روپے ہوگئی۔

Your Thoughts and Comments