بند کریں
شاعری ظفرترمذیپھر نہ ہو گا کوئی محبوسِ بلا میرے بعد

(454) ووٹ وصول ہوئے