وکی لیکس آنے کے بعد اب کونسی لیکس آنے والی ہے؟ن لیگ کے لیے خطرے کی گھنٹی بج گئی

ن لیگ والے سٹبلشمنٹ کے پاس ادھر ادھر سے بندے بھجتے ہیں اور کہتے ہیں کہ نواز شریف کو تھوڑی سی ریلیف دے دیں؛ حامد میر کی گفتگو

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان اتوار مئی 12:36

وکی لیکس آنے کے بعد اب کونسی لیکس آنے والی ہے؟ن لیگ کے لیے خطرے کی گھنٹی ..
لاہور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 06 مئی 2018ء) وکی لیکس آنے کے بعد اب کونسی لیکس آنے والی ہے؟حامد میر نے ن لیگ کے لیے خطرے کی گھنٹی بجا دی۔۔حامد میر کا کہنا ہے کہ ن لیگ والے اسٹبلشمنٹ کے پاس ادھر ادھر سے بندے بھجتے ہیں اور وہ جاکر کہتے ہیں جی سابق وزیر اعظم و قائد مسلم لیگ ن نواز شریف کو تھوڑی سی رلیف دے دیں ۔۔وکی لیکس کے بعد ایک ’ترلے لیکس ‘ آئیں گی جس میں ترلے اور منتیں کرنے والے لوگوں کے نام سامنے آئیں گے۔

کہ کن کن لوگوں نے کہاں کہاں جا کر منتیں کیں۔ تفصیلات کے مطابق معروف صحافی حامد میر کا دوران پروگرام گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ن لیگ والے اب کہتے ہیں سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان تصادم کی سیاست نہ کریں۔۔حامد میر کا کہنا تھا کہ یہ کہناکہ ن لیگ تصادم کی سیاست کرتی ہے لیکن میرے خیال سے یہ ایک بڑا معمہ ہے۔

(جاری ہے)

یہ لوگ اسٹبلشمنٹ کے پاس ادھر ادھر سے بندے بھیجتے ہیں اور وہ جاکر کہتے ہیں جی نواز شریف کو تھوڑی سی رلیف دے دیں ۔

پنجاب کی عوامی رائے ناراض ہو جائے گی۔۔حامد میر کا مزید کہنا تھا کہ آج میں ایک بات بتا رہا ہوں اور یہ بات یاد رکھئے گا کہ ایک وکی لیکس آئی تھی۔اب ایک ائے گی ’ترلا لیکس‘۔اور کس آدمی نے کہاں کہاں جا کر کس کس کے تڑلے کیے،اس کی بھی لیکس آئیں گی۔اور سب کے نام سامنے آئیں گے۔اور اس میں ہمارے اپنے بھی کچھ ساتھی شامل ہیں جو جا کر ترلے کر رہے ہیں۔اور کہتے ہیں کہ آپ سابق وزیر اعظم نواز شریف کو چھوڑ دیں۔۔حامد میر کا کہنا تھا کہ میں کچھ چیزوں کا عینی شاہد ہوں اور مجھے سمجھ نہیں آتی کہ ایک طرف نواز شریف جلسوں میں بہت بڑے انقلابی بنتے ہیں اور بہت بڑے نظریاتی بننے کی باتیں کرتے ہیں۔اور دوسری طرف آپ ترلے کر رہے ہیں۔مزید کہا کہا ویڈیو میں ملاحظہ کیجئے: