بند کریں
شاعری اعتبار ساجدکوئی بات کرنی ہے چاند سےمرے ہمسفر تری نذر ہیں مری عمر بھی کی یہ دولتیں

(282) ووٹ وصول ہوئے