بند کریں
شاعری اقبال عظیم

کچھ ایسے زخم بھی در پردہ ہم نے کھائے ہیں

-

kuch aaise zakhm bhi darparda hum ne khaye hain


(369) ووٹ وصول ہوئے