بند کریں
شاعری قائم نقوی

بے یقین موسم ہے

-

beyaqeen mosaam hai


(58) ووٹ وصول ہوئے