بند کریں
شاعری قائم نقوی

تارے تو گن رہا ہوں میں چھت پر پڑے پڑے

-

tare tu gin raha hoon main chat per pare pare


(143) ووٹ وصول ہوئے