بند کریں
شاعری رخسانہ نورموم پگھلا اور پتھرہو گیا

(349) ووٹ وصول ہوئے