بند کریں
شاعری ظہیر کاشمیری

طلب آسودگی کی عرصہ دنیا میں رکھتے ہیں

-

talab e asoodagi ki


(364) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان