Ju Iss Tarhaan Se Main Khud Ko Pichar Leta HooN

جو اس طرح سے میں خود کو پچھاڑ لیتا ہوں

جو اس طرح سے میں خود کو پچھاڑ لیتا ہوں

بنا بنایا تعلق بگاڑ لیتا ہوں

میں نا سمجھ تو نہیں رنجشوں سے لڑتا پھروں

میں رخ بدل کے محبت کی آڑ لیتا ہوں

جو گرد ذہن پہ گرتی ہے بد گمانی کی

میں گاہے گاہے اسے خود ہی جھاڑ لیتا ہوں

میں راحتوں سے کبھی مطمئن نہیں ہوتا

میں سوچ سوچ کے خوشیاں اجاڑ لیتا ہوں

یہ درد بھی یوں ہی اٹکھیلیاں نہیں کرتے

کبھی کبھی میں انہیں چھیڑ چھاڑ لیتا ہوں

تمہارے دکھ میں کوئی اور دکھ ملاتا نہیں

میں شب گزار کے خیمہ اکھاڑ لیتا ہوں

کتاب زیست تجھے غم نہیں تھماتا کوئی

میں دن گزار کے صفحے کو پھاڑ لیتا ہوں

بابر علی اسد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(796) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Babar Ali Asad, Ju Iss Tarhaan Se Main Khud Ko Pichar Leta HooN in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 7 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Babar Ali Asad.