بند کریں
شاعری علی حسن شیرازی

دھڑکنوں میں کہیں ترا چہرہ

-

dharkanooN main kahin tera


(241) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان