بند کریں
شاعری نوید اکبر

محبت مر نہیں سکتی

-

muhabbat mar nahi sakti


(248) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان