Ban Sanwar Kar Saji Si Rehti Hai

بن سنور کر ، سجی سی ، رہتی ہے

بن سنور کر ، سجی سی ، رہتی ہے

خواب میں اک پری سی رہتی ہے

وہ نہیں رہتی میرے سینے میں

اک دھما چوکڑی سی رہتی ہے

دھیمے جلتے دئے سی اک لڑکی

آنکھ میں روشنی سی رہتی ہے

شام اُٹھتی ہے اُس کے کاجل سے

رات تک بے خودی سی رہتی ہے

وہ اُترتی ہے میرے آنگن میں

صبح تک چاندنی سی رہتی ہے

بات کہنے کی کہہ گیا اُس سے

ہاں مگر ان کہی سی رہتی ہے

روز آتے ہیں لوگ ملنے کو

ہے جو اک بے دلی سی رہتی ہے

ہے محبت وہ معجزہ ثانی

یاد جس کی ہری سی رہتی ہے

وجیہ ثانی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(460) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Wajeeh Sani, Ban Sanwar Kar Saji Si Rehti Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken Urdu Poetry. Also there are 25 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Wajeeh Sani.