بند کریں
شاعری عارف شفیق

یہی ثبوت ہے کافی کہ میں بھی سچاہوں

-

yhi sabot hai kafi k main bhi sacha hun


(283) ووٹ وصول ہوئے