بند کریں
شاعری اذلان شاہکماں نہ تیر نہ تلوار اپنی ہوتی ہے

(315) ووٹ وصول ہوئے