بند کریں
شاعری افتخار عارف

کسی کے جورو ستم یاد بھی نہیں کرتا

-

Kisi Kay


(188) ووٹ وصول ہوئے