بند کریں
شاعری کنور امتیازاحمد

جب سے روٹھا ہے ہمسفر میرا

-

jab-se-rotha-hai


(212) ووٹ وصول ہوئے