بند کریں
شاعری میر تقی میرغم رہا جب تک کہ دم میں دم رہا

(134) ووٹ وصول ہوئے