بند کریں
شاعری نظیر اکبر آبادی

کچھ ایسی ہے کوئے یار کی صبح

-

Kuch aise hai


(307) ووٹ وصول ہوئے