بند کریں
شاعری صائمہ کامران

وہ خواب لگے ہے کبھی تعبیر لگے ہے

-

wo khawab lage hai kabhi tabeer lage hai


(229) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان