بند کریں
شاعری صائمہ منصورزندگی کے کاغذ پر پھر وہی کہانی ہے

صائمہ منصور

saima mansoor

(238) ووٹ وصول ہوئے