بند کریں
شاعری شاہد ماکلیموج

توڑ کر شاخ ہوا سوچ میں پڑ جاتی ہے

-

toor kar shaakh howa soch main par jaati hai


(271) ووٹ وصول ہوئے