بند کریں
شاعری شاہدزکی

یہ جو اظہار کرنا ہوتا ہے

-

yeh ju izhar karna hota hai


(202) ووٹ وصول ہوئے