Nahi Oi Khabar Karna Nahi Hai

نہیں کوئی خبر کرنا نہیں ہے

نہیں کوئی خبر کرنا نہیں ہے

ہمیں کچھ بھی اثر کرنا نہیں ہے

بہت ہی خوب صورت زندگی ہے

مگر آساں بسر کرنا نہیں ہے

ہوا کو راستہ گر مل بھی جائے

چراغوں پر اثر کرنا نہیں ہے

گھروندے ہی میں اپنے لوٹ جاؤں

کہ خود کو در بدر کرنا نہیں ہے

ہزاروں راستے تو منتظر ہیں

تخیل میں سفر کرنا نہیں ہے

لبھاتے ہیں نئے پودے ہمیں بھی

مگر سب کو شجر کرنا نہیں ہے

ہیں اب بھی عشق کی باتیں گوارہ

لہو دل کو مگر کرنا نہیں ہے

اگر ہے زندگی سے پیار عادلؔ

مہم کوئی بھی سر کرنا نہیں ہے

عادل حیات

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(666) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Adil Hayat, Nahi Oi Khabar Karna Nahi Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 26 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Adil Hayat.