Mohabbad Nashe Ki Imaam Hai

محبت نشے کی امام ہے !

سنو ۔۔۔۔ میں اکثر سوچتی ہوں

جو ہمیں

چھتیس ہزار صبحیں

میسر ہو بھی جاتیں تو کیا ہوتا

یونہیں پچیس چھبیس برس

قلب و نظر میں خواب سجاتے گزر جاتے

پھر چون ۔۔ پچپن برس

دوڑتے بھاگتے ، کچھ جمع ، کچھ تفریق کرتے

اور ۔۔۔ باقی کے برس

کبھی اداسی تو کبھی تشویش کشید کرتے

سنو میری جان ۔۔!

کارگاہ وجود کے لئے

چھتیس ہزار صبحیں نہیں چاہیئے

بس ۔۔

حیات کے کچھ دن بارگاہ فطرت میں بسر ہوں

روح میں طمانیت، سرخوشی ، بے خودی کے راز ہوں

پاکیزہ آسمانوں کی قسم

محبت نشے کی امام ہے ۔۔۔!

ساعت سپردگی ہے

جنت آسمانوں پر نہیں ۔۔۔ من کے اندر ہوتی ہے

ڈاکٹر نگہت نسیم

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1029) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Dr Nighat Nasim, Mohabbad Nashe Ki Imaam Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 33 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Dr Nighat Nasim.