Shab Hijran Do Chand Kya Karte

گرانئ شب ہجراں دو چند کیا کرتے

گرانئ شب ہجراں دو چند کیا کرتے

علاج درد ترے دردمند کیا کرتے

وہیں لگی ہے جو نازک مقام تھے دل کے

یہ فرق دست عدو کے گزند کیا کرتے

جگہ جگہ پہ تھے ناصح تو کو بہ کو دلبر

انہیں پسند انہیں ناپسند کیا کرتے

ہمیں نے روک لیا پنجۂ جنوں ورنہ

ہمیں اسیر یہ کوتہ کمند کیا کرتے

جنہیں خبر تھی کہ شرط نواگری کیا ہے

وہ خوش نوا گلۂ قید و بند کیا کرتے

گلوئے عشق کو دار و رسن پہنچ نہ سکے

تو لوٹ آئے ترے سر بلند کیا کرتے

فیض احمد فیض

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(3186) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Faiz Ahmed Faiz, Shab Hijran Do Chand Kya Karte in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 121 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Faiz Ahmed Faiz.