KhoobaN Kay Beech JanaN Mumtaz Hae Sarapa

خوباں کے بیچ جاناں ممتاز ہے سراپا

خوباں کے بیچ جاناں ممتاز ہے سراپا

انداز دلبری میں اعجاز ہے سراپا

پل پل مٹک کے دیکھے ڈگ ڈگ چلے لٹک کے

وہ شوخ چھل چھبیلا طناز ہے سراپا

ترچھی نگاہ کرنا کترا کے بات سننا

مجلس میں عاشقوں کی انداز ہے سراپا

نینوں میں اس کی جادو زلفاں میں اس کی پھاندا

دل کے شکار میں وہ شہباز ہے سراپا

غمزہ نگہ تغافل انکھیاں سیاہ و چنچل

یا رب نظر نہ لاگے انداز ہے سراپا

اس کے خرام اوپر طاؤس مست ہے گا

وہ میر دل ربابی طناز ہے سراپا

کشت امید کرتا سرسبز سبزۂ خط

انجام حسن اس کا آغاز ہے سراپا

وقت نظارہ فائزؔ دل دار کا یہی ہے

بستر نہیں بدن پر تن باز ہے سراپا

فائز دہلوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(989) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Faiz Dehlavi, KhoobaN Kay Beech JanaN Mumtaz Hae Sarapa in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love Urdu Poetry. Also there are 19 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Faiz Dehlavi.