Mutafraq

متفرق

بدن سے خاک کھرچنے سے در نکلتے ہیں

اسی لئے تو شجر ننگے سر نکلتے ہیں

چراغ دیکھ کے مستی سبھی کو آتی ہے

دیا جلے تو پتنگوں کے پر نکلتے ہیں

گلے لگا کہ زرا حوصلہ بڑھے میرا

فقط یوں دیکھنے سے تھوڑی ڈر نکلتے ہیں

تمہارے شہر میں سورج بڑا چمکتا ہے

تمہارے شہر کے دن کس قدر نکلتے ہیں

مرض جناب کا دارو سے کم نہیں ہونا

یہ بل تو آدمی کو مار کر نکلتے ہیں

ہلا کے ڈال سمندر کو میری آنکھوں پر

ابھی نکال یہ کنکر اگر نکلتے ہیں

محمد صابر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(279) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Muhammad Sabir, Mutafraq in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 4 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Muhammad Sabir.