بند کریں
شاعری ارشد ملک

مسافر تو بچھڑتے ہیں، رفاقت کب بدلتی ہے

-

musafir tu bicharte hain rafaqat kab badalti hai


(217) ووٹ وصول ہوئے