بند کریں
شاعری جوش ملیح آبادی

زندگی خواب پریشاں ہے کوئی کیا جانے

-

zindagi khawab e pareshaan hai


(456) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان