Wahein Par Mra Saim Tan Bhi To Hai

وہیں پر مرا سیم تن بھی تو ہے

وہیں پر مرا سیم تن بھی تو ہے

اسی راستے میں وطن بھی تو ہے

بجھی روح کی پیاس لیکن سخی

مرے ساتھ میرا بدن بھی تو ہے

نہیں شام تیرہ سے مایوس میں

بیاباں کے پیچھے چمن بھی تو ہے

مشقت بھرے دن کے آخیر پر

ستاروں بھری انجمن بھی تو ہے

مہکتی دہکتی لہکتی ہوئی

یہ تنہائی باغ عدن بھی تو ہے

ثروت حسین

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(191) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sarwat Hussain, Wahein Par Mra Saim Tan Bhi To Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 53 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sarwat Hussain.