So Gaya ORh Kay Phir Shab Ki QabaeN Sooraj

سو گیا اوڑھ کے پھر شب کی قبائیں سُورج

سو گیا اوڑھ کے پھر شب کی قبائیں سُورج

دن کے دامن پہ چھڑکتا تھا ضیائیں سُورج

آج تک راکھ سمیٹی نہیں جاتی اپنی

ہم نے چاہا تھا، ہتھیلی پہ سجائیں سُورج

آنکھ بُجھ جائے تو اِک جیسے ہیں سارے منظر

اپنی بینائی کے دَم سے ہیں، گھٹائیں، سُورج

اپنی پلکوں پہ لرزتے ہوئے آنسُو موتی

اپنے بجھتے ہوئے ہونٹوں پہ دعائیں سُورج

زندگی جن کی ہو صحرا کی مسافت شہباز

ایسے لوگوں کو کبھی راس نہ آئیں سُورج

شہباز خواجہ

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2711) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Shahbaz Khwaja, So Gaya ORh Kay Phir Shab Ki QabaeN Sooraj in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 10 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Shahbaz Khwaja.