بند کریں
شاعری اعتبار ساجدکوئی بات کرنی ہے چاند سےجدھر کا رخ بھی میں کرتا

(246) ووٹ وصول ہوئے