بند کریں
شاعری عارف شفیق

پھر اونچا سرخ پرچم ہو رہا ہے

-

pher uncha sorkh parcham ho raha hai


(424) ووٹ وصول ہوئے