بند کریں
شاعری فرمان علی ارمان ہم سخن کوئی نہیں ہے رازداں کوئی نہیں

(80) ووٹ وصول ہوئے