بند کریں
شاعری فراق گورکھپوری درپردہ جرم ہوکے بھی کب تک چھپا

(230) ووٹ وصول ہوئے