بند کریں
شاعری جمال احسانی

ہر ستارے کا مقدر ٹوٹنا تھا

-

har sitare ka muqaddar totna tha


(152) ووٹ وصول ہوئے