بند کریں
شاعری میاں امر

شدتِ درد سے ٹوٹ کر بکھر جائیں گے

-

shidat e dard se tot ker bikhar jayeen ge


(160) ووٹ وصول ہوئے