بند کریں
شاعری نظیر اکبر آبادی

صورت کبھی دکھلائی تو اس میں بھی لگاوٹ

-

Surat kabhi dikhlayee


(302) ووٹ وصول ہوئے