بند کریں
شاعری قائم نقوی

خاک کو ہمسرِ مہتاب کیا رات کی رات

-

khaakh ko hamsar e mehtaab kiya raat ki raat


(143) ووٹ وصول ہوئے