بند کریں
شاعری قائم نقویخاک کو ہمسرِ مہتاب کیا رات کی رات

(143) ووٹ وصول ہوئے