بند کریں
شاعری رانا سعید دوشی

یہ کوئی خوف ہے تجھ پر کہ نشہ طاری ہے

-

yeh koi khoof hai tujh per k nasha tari hai


(268) ووٹ وصول ہوئے