بند کریں
شاعری سہیل احمد خاناک نظم کھو گئی ہے

(259) ووٹ وصول ہوئے