بند کریں
شاعری تصدق حسین تصدق

آنکھ نم اپنی کب نہیں ہوتی

-

ankh nam apni kab nahi hoti


(808) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان